فہرست الطاہر
شمارہ 55، جمادی الآخر 1430ھ بمطابق جون 2009ع

حضور سوہنا سائیں اور تعلیم کی قدر

(مأخذ از سیرت ولی کامل)

حضور سوہنا سائیں نوراللہ مرقدہٗ کو بچپن میں تعلیم کا اس قدر شوق تھا کہ تعلیم میں رخنہ واقع ہونے کی وجہ سے ضرورت کے تحت ہی گھر آیا کرتے تھے، یہاں تک کہ اگر گھر آنے کی کوئی خاص ضرورت نہ ہوتی تو مدرسہ کی چھٹیوں میں بھی گھر نہ آتے تھے، استاد محترم کے پاس رہ کر پڑھتے تھے۔ یہی نہیں بلکہ چند بار عید کرنے بھی گھر نہ آئے، حالانکہ بھریا پڑھنے کے زمانہ میں آپ کی شادی بھی ہو چکی تھی۔ چنانچہ عید کے بعد والدہ صاحبہ و دیگر اہل خانہ کے نام تسلی دیتے ہوئے تفصیل سے خط لکھتے تھے کہ میں بالکل خیریت سے ہوں، صرف تعلیم کی وجہ سے گھر نہ آیا، عید کے دن شاید آپ نے ایک قسم کا کھانا کھایا ہو، مجھے تو سات قسم کے کھانے (نام لکھ کر) میسر ہوئے وغیرہ اور ہر خط کے آخر میں والدہ محترمہ کے نام اہلیہ کی دلجوئی اور کھانے پینے میں حتی المقدور وسعت و کشادگی کی تاکید لکھتے تھے۔ گو کتنی ہی دیر بعد گھر آتے اور والدہ صاحبہ آپ کے لئے بہت اداس اور بے تاب ہوتیں، پھر بھی کبھی یہ نہ کہا کہ آپ کیوں دیر سے آئے؟ یا عید کے لئے تو آجاتے وغیرہ۔ بلکہ جب کبھی کہا یہی کہا (تو اللہ تعالیٰ کا ہے) اللہ تعالیٰ تجھے ہمیشہ خوش رکھے وغیرہ۔