فہرست الطاہر
شمارہ 55، جمادی الآخر 1430ھ بمطابق جون 2009ع

آپ کے خطوط

٭الطاہر بڑی شدت انتظار کے بعد عرس مبارک سے لیا۔ ماشاء اللہ ٹائیٹل کور پر آقا و مولیٰ آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم کے پیارے سبز گنبذ اور جشن عید میلاد النبی صلی اللہ علیہ وسلم کی نسبت والے Design نے دل کو سکون و اطمینان اور آنکھوں کی بینائی بڑھادی۔ ”اثبات المولد والقیام“، حضرت ابوالحسن خرقانی رحمۃ اللہ علیہ اور بقیہ مکمل شمارہ ماشاء اللہ بہت اچھا، علمی اور اعلیٰ ہے۔ مگر اس مرتبہ پروف ریڈنگ میں کچھ خامیاں ہوئی ہیں۔ تھوڑی گرامر کی غلطیاں بھی ہیں جن کو درست کرکے پھر شامل کرکے شایع کرانا آپ کا کام ہے۔ الطاہر میں اشتہارات کے لیے جماعت کے مخیر حضرات، خلفاء کرام، علماء کرام اور روحانی طلبہ جماعت کی مرکزی باڈی و صوبائی باڈی، جماعت اصلاح المسلمین کی مرکزی باڈی کو آپ یہ لکھ کر گذارش کریں کہ وہ الطاہر کے لیے اشتہارات Search کرکے دیں، اس کے علاوہ ہر ضلع میں کسی ایک مخیر اور اچھی آمدنی والے خلیفہ صاحب پر یہ لازم کیا جائے کہ وہ الطاہرکی تقریباً 300 عدد کاپیاں منگوائے اور اپنے حلقہ تبلیغ میں کسی پر یہ ذمہ داری ڈالے یا خود ذمہ اٹھائے۔ اس سے الطاہر کو بڑی اچھی رقم بھی مل جائے گی اور تبلیغ میں بھی اضافہ ہوگا انشاء اللہ۔ اس کے علاوہ جماعت کے مراکز، مدارس اور تبلیغی علائقہ جات و مساجد میں بھی وہیں کے کسی لوکل فقیر کو چنا جائے کہ وہ الطاہر کی زیادہ سے زیادہ کاپیاں منگواکر Sale کرے اور مخیر حضرات سے بھی تعاون لیتا رہے۔ اسکول کالج اور تعلیمی اداروں میں بھی طلباء و طالبات دینی رسائل بڑے شوق سے لیتے ہیں۔ ہر ضلع میں خلفاء کرام اسکول و کالجز میں الطاہر کو تبلیغی پیغام کی حیثیت سے بھیجیں۔

(جسارت الیاس جوکھیو طاہری۔ چکوال پنجاب)

﴾جسارت صاحب آپ کے خط نے حوصلہ دیا۔ اشتہارات کے سلسلے میں ادارہ انشاء اللہ پیش رفت کرکے مطلوبہ نتائج حاصل کر یگا۔


٭رسالہ الطاہر شمارہ 54 عرس مبارک حضرت عبدالغفار مٹھا سائیں کے موقعہ پر خریدا بہت پسند آیا۔ سب مضمون اچھے تھے لیکن کمی محسوس ہوتی ہے وہ یہ کہ حضرت صاحب کے ملفوظات وغیرہ شایع نہیں ہوتے جس کی ہمیں پیاس ہوتی ہے۔ دوسری بات کہ رسالہ میں صفحات تھوڑے ہوتے ہیں قیمت اس حساب سے کچھ زیادہ لگتی ہے۔ شاید اشتہارات کی وجہ سے۔ اس لیے عرض ہے آپ بھی ایسے کاروباری اداروں سے رابطہ رکھیں، کافی اپنے فقیر بھی اداروں کے مالک ہوں گے ان سے ان کے کاروبار میں ترقی ہوگی۔

(فقیر حبیب اللہ میمن طاہری۔ بھریا سٹی)


٭الطاہر رسالہ ایک بہترین معلوماتی رسالہ ہے۔ ہماری دعا ہے کہ رب کائنات اس رسالے کو اور اس کے پڑھنے والوں کو اور ترقی عطا فرمائے۔ اس رسالے کو زیادہ خوبصورت بنانے کے لیے چند باتیں عرض کرنا چاہتا ہوں ناقص عقل سے۔ جو مضامین قسط کی صورت میں چھاپے جاتے ہیں برائے مہربانی اس کو قسط وار نا چھاپیں، کیونکہ آج کا دور اتنی تیزی سے چل رہا ہے کہ ہر کوئی بے حد زیادہ مصروف ہے۔ صبح کا کیا ہوا کام شام کو یاد نہیں۔ قسط وار دو ماہ بعد چھپنے والا مضمون کیسے یاد رہے گا۔ اگر مختصر ایک قسط میں چھاپا جائے تو امید ہے کہ اس مضمون کا غرض غایۃ حاصل ہوجائے گا۔ مثنوی شریف میں سے ایک نصیحت آموز واقعہ اور مختصر تشریح بھی شایع ہو تو فائدہ ہوگا۔ مکتوبات امام ربانی میں سے بھی ایک دو مکتوب شامل کیے جائیں تو الطاہر کو چار چاند لگ جائیں گے۔ اس سے یہ فائدہ ہوگا کہ رسالے کے ذریعے قارئین کو طریقت کی تربیت بھی ہوجائے گی۔ اسلامی رسالے تو بہت چھپتے ہیں لیکن جو پیغام ہونا چاہیے وہ نہیں ملتا۔ حضور قبلہ عالم بھی اکثر تقاریر میں فرماتے ہیں مثنوی پڑھو اولیاء اللہ کے حالات پڑھو۔ اگر یہ چیزیں ہمیں ادارہ مہیا کرے تو تمام قارئین آپ کے شکر گذار رہیں گے۔

(ابو رضائے مصطفیٰ بوزدار۔ وہرو شریف عمر کوٹ)

﴾ ابو رضائے مصطفیٰ صاحب آپ کی تجاویز نہایت شاندار ہیں انشاء اللہ آئندہ رسالے سے آپ کی تجاویز زیر عمل ہوں گی۔


٭شمارہ نمبر 54 ملا پڑھنا نصیب ہوا۔ دل کو بڑی خوشی ہوئی ہمیشہ کی طرح سے ”ایڈیٹر کے قلم سے“ بہت اچھا لگا خاص طور پر ”اپنی خاطر“ اور ”ہم چلے اعتکاف کرنے“ بہت پسند آیا۔

(وقاص طاہری۔ بدین)


٭الحمدللہ پہلی بار خط لکھ رہا ہوں۔ مجھے امید ہے کہ آپ میرا خط ضرور شایع کریں گے۔ شمارہ 54 پڑھا اور پڑھ کر اچھا لگا اور خاص کر کہ اثبات المولد والقیام اپنی مثال آپ تھا۔

(علی بخش راہوجا طاہری۔ کوئٹہ کینٹ)


٭کافی عرصے کے بعد ایک منقبت شریف کے ساتھ حاضر خدمت ہوں اس امید ہے کہ آپ حوصلہ افزائی فرمائیں گے۔ ہماری دلی دعائیں الطاہر کے لیے اور جماعت اصلاح المسلمین کے لیے ہیں۔

(مسز اعجاز۔ راولپنڈی)


٭شمارہ نمبر 54 سالانہ عرس مبارک درگاہ فقیر پور شریف پر ملا۔ یہ عاجز وقتاً فوقتاً الطاہر میں حصہ لیتا رہتا ہے۔ آپ سے چھوٹی سی گذارش ہے کہ مقابلہ ذہنی آزمائش نمبر 81 کے درست جوابات بھیجنے والوں کے ناموں میں عاجز کے نام کے ساتھ شہداد کوٹ لکھا گیا ہے۔ یہ عاجز پہلے بھی عرض کرچکا ہے کہ اس عاجز کا تعلق قمبر سے ہے اور ضلع قمبر شہداد کوٹ ہے توجہ فرمائیں۔

(محمد آصف قریشی۔ قمبر علی خان)


٭پہلی مرتبہ خط لکھ رہا ہوں۔ امید ہے کہ شائع کیا جائے گا۔ شمارہ نمبر 54 پڑھا۔ بہت خوشی ہوئی۔ کئی رسالوں کا مطالعہ کیا لیکن الطاہر اپنی مثال آپ ہے۔ بہترین مضامین، معلوماتی باتیں اور تبلیغی سرگرمیاں بہترین ہیں کیونکہ تبلیغی سرگرمیوں کی وجہ سے دوستوں میں کرنے کا حوصلہ پیدا ہوگا۔ مقابلہ ذہنی آزمائش بہترین ہے۔ کیونکہ اس کی وجہ سے پورے رسالے کو پڑہنے کا موقع مل جاتا ہے۔ اللہ سے دعا ہے کہ رسالہ الطاہر دن دگنی رات چوگنی ترقی کرتا رہے۔

(بھائی خان طاہری۔ وندر ضلع لسبیلہ بلوچستان)


٭دوماہی الطاہر کے دو شمارے دسمبر 2008 فروری 2009 ناچیز کو ایک دوست کے تعاون سے ملے۔ بعد مطالعہ دل سے دعائیں نکلتی ہیں کہ ایسا پیارا مجلۂ بھی اشاعت پذیر ہے۔ سبھی مضامین اور سلسلے اپنی مثال آپ ہیں ۔ علماء اہل سنت کے انٹرویوز کا سلسلہ شروع کیا جائے تو بہتر ہے حضرت علامہ مفسر القرآن قبلہ مولانا ادریس ڈاہری نقشبندی مجددی بخشی طاہری مدظلہ العالی کا انٹرویو ضرور شایع کریں۔ حضرت قبلہ سوہنا سائیں رحمۃ اللہ علیہ کی سوانح حیات پر مشتمل کوئی کتاب تحفتاً ارسال فرما کر ڈھیروں دعائیں حاصل کریں۔

(فقیر ربن علی کمہار قادری۔ سانگھڑ)


٭شمارہ نمبر 54 پڑھا ساری کتاب اچھی لگی بالخصوص مضمون ”حضرت پیر مٹھا رحمۃ اللہ علیہ کی دین پور آمد“ بہت ہی اچھا لگا اللہ تعالیٰ سب دوستوں کو یہ مبارک رسالہ خریدنے اور پڑھنے کی توفیق عطا فرمائے اور اس کو خرید کر تحفے کے طور پر مسلمان بھائیوں میں فی سبیل اللہ تقسیم کیا جائے تاکہ دوسرے دوست بھی سجن سائیں کے فیض وبرکات سے مستفیض ہوجائیں۔

(کلیم اللہ جوکھیو طاہری)


٭میں نے مقابلہ ذہنی آزمائش نمبر 80 میں انعام جیتا تھا لیکن اس کا تحفہ مجھے نہیں ملا۔ جب دفتر فون کیا تو انہوں نے بتایا کہ آپ پوسٹ آفس سے پتہ کریں ہم نے بھجوادیا ہے لیکن پوسٹ آفس میں پتہ کرنے سے پتہ چلا کہ ایسی کوئی رجسٹری وہاں نہیں آئی برائے کرم آپ مجھے میرا تحفہ ارسال کردیں۔

(قدسیہ مبین)


٭حسب معمول الطاہر رسالہ بہت اچھا لگا۔ تمام مضامین پسند آئے۔ بہت سے معلومات اور علم حاصل ہوا۔ میری دعا ہے کہ الطاہر رسالہ اور الطاہر رسالے کی ٹیم کو دن دگنی رات چوگنی کامیابیاں ملیں۔ آمین

(سائرہ طاہری۔ دنبہ گوٹھ ملیر کراچی)


٭شمارہ نمبر 54 پڑھا پڑھ کر قلبی سکون حاصل ہوا۔ الطاہر رسالہ میرا پسندیدہ رسالہ ہے۔ تمام مضامین بہت اچھے تھے ”ہم چلے اعتکاف کو“ اور ”گلہائے رنگ“ بہت پسند آئے۔ میں ایک لطیفہ بھیج رہی ہوں ضرور شایع کریں۔ اور میری دعا ہے کہ اللہ الطاہر رسالے کو دن دگنی رات چوگنی ترقی عطا فرمائے آمین۔

(عظمیٰ کنول صدیق طاہری۔ نوابشاہ)


٭شمارہ نمبر 54 پڑھا تمام مضامین اچھے تھے۔ ماشاء اللہ الطاہر بہت اچھا ہے۔ اللہ تعالیٰ الطاہر کو دن دگنی رات چوگنی ترقی عطا فرمائے۔ آمین ثم آمین اور اس میں ہمارے دینی مسائل کا حل بھی شروع کردیں۔ اور اس سلسلے کو روکیں مت۔

(فقیر حضور بخش طاہری۔ پتھرکالونی حب بلوچستان)


٭پچھلی اشاعت میں میں نے ضلع بدین کے عہدیداران کی سلیکشن کا احوال بھیجا تھا جو شایع نہیں ہوا۔ شاید محکمہ ڈاک نے کچھ زیادہ ہی ذمہ داری دکھائی ہیں۔ اس اشاعت میں ضلع بدین روحانی طلبہ جماعت کے دوستوں کے نام اور کچھ خاص پروگراموں کی رپورٹ بھیج رہا ہوں امید ہے کہ ضرور شایع کریں گے۔ ایک اور عرض ہے کہ حضور قبلہ عالم محبوب سجن سائیں اور آپ کے سفرناموں کی کتاب کی صورت میں شایع کیا جائے۔

(کاشف احمد راجپوت طاہری۔ ماتلی)


٭شمارہ نمبر 54 پڑھا تمام مضامین اچھے تھے۔ برائے مہربانی رسالے کو ماہوار کردیں تین دن میں پڑھ کر اس کے بعد ہم سے دوماہ تک انتظار نہیں کرسکتے۔

(فقیر فاروق احمد طاہری۔ پتھر کالونی حب چوکی)


ان احباب کے نام جن کے خطوط ہںیہ موصول ہوئے۔

(محمد فرمان علی راجپوت طاہری۔ سانگھڑ)

(کم سن لکھاری انیقہ امتیاز)

(حمیر عباس انصاری۔ ماتلی)

(محمد صادق جمیل طاہری۔ لاڑکانہ سٹی)

(فقیر شہاب الدین پیرزادہ طاہری۔ حب چوکی بلوچستان)

(صدام علی طاہری۔ پتھر کالونی حب)

(محمدعلی انگاریہ طاہری۔ ٹول پلازہ کراچی)