[ فہرست ]

تحفۂ حبیب

 

حدیث نمبر ۳

جنت کی کنجی

حدیث شریف میں کلمہ طیبہ کو جنت کی کنجی قرار دیا گیا ہے۔

عَنْ مَعَاذِ بْنِ جَبَلٍ قَالَ قَالَ لِيْ رَسُوْلُ اللهِ صَلَّى اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ مَفَاتِيْحُ الْجَنَّةِ شَهَادَةُ اَنْ لَّا اِلٰهَ اِلَّا اللهُ.

رواہ احمد ص۱۵ مشکوٰۃ المصابیح

حضرت معاذ بن جبل رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا کہ اس امر کی گواہی دینا کہ اللہ تعالیٰ کے سوا کوئی معبود نہیں ہے، بہشت کی کنجیاں ہیں۔

وضاحت

بلاشبہ لا الٰہ الّا اللہ جنت کی کنجی ہے، لیکن اس کا یہ مطلب نہیں کہ کلمہ گو آدمی کو اب کسی اور عمل اور اطاعت کی حاجت نہیں۔ بلکہ درست عقیدہ اور شریعت مطہرہ پر عمل پیرا ہونا اسی قدر ضروری ہے، جس طرح چابی کے لیے دندانے ضروری ہیں۔ صحابی رسول حضرت وہب بن منبہ رضی اللہ عنہ سے دریافت کیا گیا

اَلَيْسَ لَا اِلٰهَ اِلَّا اللهُ مِفْتَاحُ الْجَنَّةِ قَالَ بَلىٰ وَ لٰكِنْ لَيْسَ مِفْتَاحٌ اِلَّا وَ لَهٗ اَسْنَانٌ فُتِحَ لَكَ وَ اِلَّا لَمْ يُفْتِحُ لَكَ.

رواہ البخاری مشکوٰۃ المصابیح ص۱۶۔

کیا لَا الہ الّا اللہ جنت کی کنجی نہیں؟ فرمایا ہاں جنت کی کنجی ہے لیکن دندانے کے بغیر کوئی چابی نہیں ہوتی۔ اگر تو دندانے والی چابی لے آئے گا تو تیرے لیے (دروازہ) کھل جائے گا، ورنہ نہیں کھلے گا۔

لہٰذا کلمۂ توحید و تسلیم رسالت خاتم الانبیاء والمرسلین صلّی اللہ علیہ وسلّم کے بعد اسلام کے دیگر ارکان، فرائض و واجبات بلکہ سنن و مستحبات کو ماننا اور حتی المقدور ان پر عمل کرنا بھی ازبس ضروری ہے۔